اسلام آباد (این این آئی)سال 2021 میںمہنگائی5سے11 فیصد کی بلند سطح تک پہنچ گئی۔ میڈیا رپوٹس کے مطابق ملک میں پٹرولیم مصنوعات،زرعی اجناس اور اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ،روپے کی قدر میں بے تحاشہ کمی، موجودہ حکومت کی ایڈہاک اقتصادی

پالیسیاں اس معاشی بحران کے اہم عوامل ہیں جس کی وجہ سے رواں سال مہنگائی 11.5فیصد تک پہنچ گئی۔آفیشل کنزیومر پرائس انڈیکس کے اعداد و شمار کے مطابق جنوری 2021 میں 5 فیصد سے شروع ہونے والا افراط زر اضافہ نومبر 2021 میں 20 ماہ کی بلند ترین سطح 11.5 فیصد تک پہنچ گیا ہے۔اعداد و شمار کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے، روپے کی قدر میں بے تحاشہ کمی، زرعی اجناس کے نرخوں میں مسلسل اضافہ اور سب سے بڑھ کر پاکستان تحریک انصاف کی ایڈہاک اقتصادی پالیسیاں اس معاشی بحران کے اہم عوامل میں سے ہیں۔اعداد و شمار کے مطابق جنوری میں سالانہ 5 فیصد سے شروع ہونے والی مہنگائی فروری میں 8 فیصد، مارچ میں 9 فیصد، اپریل میں 11 فیصد، مئی میں 10 فیصد، جون میں 9 فیصد، جولائی اور اگست میں 8 فیصد، ستمبر اور اکتوبر میں 9 فیصد ریکارڈ کی گئی۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں