لاہور( این این آئی)پنجاب اسمبلی کے ایوان نے چھ مسودات قوانین کثرت رائے سے منظور کر لئے جبکہ مسودہ قانون لاہور سٹی یونیورسٹی اورسمارٹ یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنا لوجی ایوان میں متعارف کرائے گئے جنہیںہائر ایجوکیشن کمیٹی کے سپرد کر کے دو ماہ میں رپورٹ طلب کر لی گئی ،جبکہ ایوان نے خلیفہ اول سیدنا ابوبکر صدیق ؓکے یوم وفات کو سرکاری سطح پر منانے سمیت

دو قرارددیں بھی منظور کر لیں ،صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا ہے کہ تین سال بعد تو سوال کا جواب ویسے ہی اپنی افادیت کھو دیتا ہے، چیئر سے مطالبہ کرتا ہوں اس پر رولنگ دیں۔پنجاب اسمبلی کا اجلاس گزشتہ روز بھی2 گھنٹے 27 منٹ کی تاخیر سے سپیکر چوہدری پرویز الٰہی کی صدارت میں شروع ہوا۔اجلاس میں صوبائی وزیر جہانزیب کھچی نے محکمہ ٹرانسپورٹ کے بارے میں سوالوں کے جوابات دئیے ۔اجلاس کے دوران لیگی رکن ارشد ملک اور صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ جہانزیب کھچی کے درمیان حادثات پر تکرار بھی ہوئی ۔ ارشد ملک نے بسوں کے سفر کو موت کا پروانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہر روز ساہیوال میں اتنی اموات ہو رہی ہیں کہ ٹرانسپورٹ موت بانٹ رہی ہے، کبھی اٹھائیس اور تو کبھی چھ لوگ حادثات کا شکار ہو جاتے ہیں۔جس پر سپیکر نے کہا کہ اٹھائیس لوگ کیا صوبائی وزیر پر ڈالنے ہیں۔ وزیر ٹرانسپورٹ نے ایوان میں کہا کہ فٹنس کے بغیر کوئی گاڑی روٹ پر نہیں آتی، حادثات کی روک تھام کیلئے ٹریفک پولیس اور پولیس موثر کارروائیاں کرتی رہتی ہیں۔اجلاس میں وزیر ٹرانسپورٹ جہانزیب کھچی کی جانب سے تسلی بخش جوابات نہ دئیے جانے پر وزیر قانون راجہ بشارت اور اپوزیشن ارکان ایک پیج پر نظر آئے ۔ وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا کہ تین سالوں بعد سوال ویسے ہی اپنی افادیت کھو دیتا ہے، متعلقہ وزیر نے ایک دن پہلے تیاری کے لئے محکمے سے بریفنگ لی ہوگی ،انہیں چاہیے تھا کہ وہ اپ ڈیٹ جوابات ایوان میں دیتے،جب وزیر بریفنگ لے رہے ہوتے ہیں تو تازہ صورتحال پر جوابات تیار کرنے چاہئیں۔میں چیئر سے مطالبہ کرتا ہوں کہ اس پر رولنگ دیں ،پینل آف چیئر مین کا کہنا تھا کہ میں وزیر قانون کی بات سے متفق ہوں ۔ایوان میں لیگی رکن عظمی بخاری نے بھی وزیر قانون کی تائید کی اور متعلقہ حکام کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اجلاس میں ارکان اسمبلی کے سوالات کا جواب دینا گوارا نہیں کیا جاتا،ارکان اسمبلی کو اجلاس کا ایجنڈا تک فراہم نہیں کیا جاتا پیر اور منگل کے روزجو بل منظور ہوئے معزز ارکان کو اس کی کاپی تک فراہم نہیں کی گئی۔پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں پرائیویٹ ممبر ڈے کے موقع پر مفاد عامہ سے متعلقہ قراردادکم پیمانہ اورملاوٹ شدہ پیٹرول کی فروخت کے خلاف قرارداد متفقہ طور پر منظور کر لی۔قرارداد مسلم لیگ (ن)کے رکن اسمبلی مرزا جاوید نے ایوان میں پیش کی۔ پنجاب اسمبلی پنجاب اسمبلی نے خلیفہ اول سیدنا ابوبکر صدیق ؓکے یوم وفات کو سرکاری سطح پر منانے کی قرارداد بھی متفقہ طور پر منظور کر لی ، مذکورہ قرارداد رکن اسمبلی معاویہ اعظم طارق نے ایوان میں پیش کی۔

اجلاس میں مسودہ قانون دی پنجاب ریگولر ائزیشن آف سروس ترمیمی بل 2021، مسودہ قانون دی یو نیورسٹی آف دی سنٹرل پنجاب ترمیمی بل 2021، مسودہ قانون دی یو نیورسٹی آف راولپنڈی بل 2021، مسودہ قانون دی یو نیورسٹی آف آرٹس اینڈ سائنسز بل 2021، مسودہ قانون دی نور انٹر نیشنل یو نیورسٹی لاہور ترمیمی بل 2021اور مسودہ قانون دی سالار یو نیورسٹی بل 2021ایوان میںپیش ہوئے جنہیں

کثرت رائے سے منظورکر لیا گیا۔بعد ازاں رکن اسمبلی نیلم حیات ملک نے سپیکر کی اجازت سے مسودہ قانون دی لاہور سٹی یونیورسٹی بل 2021 اور رکن اسمبلی عظمیٰ کاردار نے مسودہ قانون دی سمارٹ یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنا لوجی بل ایوان میں متعارف کرائے جنہیں سپیکر نے ہائر ایجوکیشن کمیٹی کو ریفر کر تے ہوئے دو ماہ میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔ ایجنڈے کی تکمیل پر اجلاس غیر معینہ مدت تک کیلئے ملتوی ہو گیا۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں