اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )جمیعت علما اسلام پاکستان (جے یو آئی) نے لاڑکانہ میں پاکستان پیپلزپارٹی کےخلاف نیا عوامی اتحاد تشکیل دے دیا۔تفصیلات کے مطابق جےیوآئی نےلاڑکانہ میں پیپلزپارٹی مخالف اتحادبنالیا، اس حوالے سے جے یو آئی نے پاکستان تحریک انصاف،

گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے مقامی رہنماؤں سے ملاقاتیں کیں اور ضلع میں مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا۔ نجی ٹی وی اے آروائی کےمطابق ذرائع کے مطابق جےیوآئی نے لاڑکانہ میں پی پی کےخلاف بنائے جانے والے عوامی اتحاد میں پی ٹی آئی اورجی ڈی اے کے علاوہ قوم پرست تنظیموں کو بھی ساتھ چلنے کی دعوت دی۔جےیوآئی لاڑکانہ کی قیادت عوامی اتحاد میں شامل جماعتوں کے ساتھ مل کر جلد پاکستان پیپلزپارٹی کے خلاف مہم شروع کرے گی۔ لاڑکانہ عوامی اتحاد میں پی ٹی آئی کے اہم رہنما اللہ بخش انڑ اور رہنما امیربخش بھٹو جبکہ جی ڈی اے کےرہنما صفدر عباسی اور معظم عباسی شامل ہیں۔ دوسری جانب ن لیگ اور اتحادی جماعتوں کا آزاد گروپ بنانے کا فیصلہ۔ ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن نے پیپلزپارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے ساتھ نہ بیٹھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ مسلم لیگ ن، پختونخوا ملی عوامی پارٹی اور نیشنل پارٹی کے وفد نے چیئرمین سینیٹ سے ملاقات کی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ چیئرمین سینیٹ سے ملاقات کرنے والے وفد کے 27 ارکان نے آزاد گروپ بنانےکی درخواست جمع کرا دی۔ مسلم لیگ ن کے رہنما مصدق ملک ن کہا ہے کہ سینیٹ میں ہمارا اپنا آزاد گروپ ہو گا جبکہ ہم پیپلز پارٹی اور اے این پی کے ساتھ نہیں بیٹھیں گے۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں