لاہور( این این آئی) وفاقی تحقیقاتی ایجنسی ( ایف آئی اے ) نے معروف کاروباری و سیاسی شخصیت جہانگیرترین او ران کے صاحبزادے علی ترین کوایک بارپھر9اپریل کوطلبی کا نوٹس جاری کر دیا ،ایف آئی اے نے جہانگیر ترین کودو جبکہ علی ترین کو ایک کیس کی تفتیش کیلئے طلب کیا ہے ۔

ایف آئی اے کے نوٹس کے متن میں کہا گیا ہے کہ علی ترین نے والدسے ملکر شیئر ہولڈرزکے ساتھ فراڈ کیا،گنے کے کاروبارکوخودسے طے کردہ قیمت4.85ارب روپے میں بیچا ،ٹرانزکشن سے جہانگیر ترین خاندان کو شیئر زہولڈ کی قیمت پرفائدہ ہوا ۔ بتایا گیا ہے کہ ایف آئی اے نے علی ترین کو5سوالات کے جوابات ساتھ لانے کی ہدایت کی ہے ۔ علی ترین سے پوچھے گئے سوالات میں استفسار کیا گیا ہے کہ ایف ایس ایل چینی کے کاروبار کو کیوں بیچا گیا،گنے کا کاروبار بیچنے کیلئے کیا کہیں بھی اشتہار دیا گیا،کتنے ممکنہ خریداروں نے کمپنی سے رابطہ کیا اور کیا قیمت لگائی،کمپنی ریکارڈ کے مطابق جے کے ایف ایس ایل کو 2013میں326ملین کانقصان ہوا،نقصان کے باوجود گنے کاکاروبار کئی گناہ زیادہ قیمت پر جے ڈی ڈبلیو کو بیچاگیا،گنے کاکاروبار بیچنے کی قیمت 4.35ارب روپے کیسے لگائی گئی اس کی دستاویزات فراہم کی جائیں۔ مزید استفسار کیا گیا ہے کہ جے کے ایف ایس ایل نے4.35ارب روپے کہاں استعمال کئے اس کی منی ٹریل بھی پیش کریں ۔واضح رہے کہ جہانگیر ترین او ران کے صاحبزادے نے عدالتوں سے عبوری ضمانتیں حاصل کر رکھی ہیں۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں