سان فرانسسکو: ٹیکنالوجی پر نظر رکھنے والے ماہرین نے گزشتہ دنوں انکشاف کیا تھا کہ ہیکرز نے فیس بک کے 53 کروڑ سے زائد صارفین کا ڈیٹا آن لائن لیک کردیا۔انٹرنیٹ پر 106 ممالک سے تعلق رکھنے والے 53 کروڑ تیس لاکھ سے زائد فیس بک صارفین کا ذاتی ڈیٹا شیئر کیا گیا،

جس میں فون نمبرز، تصاویر، لوکیشن سمیت دیگرذاتی معلومات شامل تھیں۔ٹیکنالوجی ماہرین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ہیکرز فیس بک صارفین کے نام، لوکیشن، ای میل اور ذاتی معلومات کو استعمال کر کے جعلی اکاؤنٹس بنا کر فراڈ کر سکتے یا صارفین کو کسی بھی وجہ سے مشکل میں ڈال سکتے ہیں۔برطانیہ سے تعلق رکھنے والے 1 کروڑ 10 لاکھ صارفین کا ڈیٹا لیک ہوا جبکہ امریکا کے 3 کروڑ بیس لاکھ اور بھارت کے  60 لاکھ صارفین بھی شامل تھے۔

اب برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ماہرین نے اُس ویب سائٹ کا سراغ لگا لیا ہے جہاں پر متاثرہ صارفین کا ڈیٹا موجود ہے۔ اگرآپ کو بھی خدشہ ہے تو ویب سائٹ کے ’لنک‘ پر کلک کر کے اپنا نام چیک کرسکتے ہیں۔

دوسری جانب فیسبک نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ اُنکے53کروڑ صارفین کا ڈیٹا آن لائن لیک ہوا ہے۔ کمپنی ترجمان نے بتایا کہ ہیکرز نے یہ ڈیٹا 2019 میں چوری کیا تھا۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں