لاہور (آن لائن)سندر انڈسٹرئیل سٹیٹ میں واقع ایک کیمیکل ملز میں ہولناک آتشزدگی کے دوران ہونے والے تین دھماکوں سے پورا اعلاقہ لرز اٹھا جس سے علاقے میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا گرد و نواح کی فیکٹریوں سے مزدور باہر نکل آئے جبکہ آتشزدگی کی اطلاع ملتے ہی ریسکیو 1122کی پندرہ گاڑیاں اور چالیس سے زائد ریسکیو اہلکار امدادی سرگرمیوں کے لیئے جائے وقوعہ پر پہنچ گئے

جنہوں نے 10گھنٹوں کی جد و جہد کے بعد آ گ پر قابو پایا آگ اس قدر شدید تھی کہ علاقے میں تیز ہوائیں چلنے کی وجہ سے کالے دھوویں کے بادل پورے علاقے میں چھا گئے یہ بھی بتایا گیا ہے کہ فیکٹری میں پہلا دھماکہ بوائلر پھٹنے سے ہوا جس سے آگ بھڑک اٹھی اور آگ سے فیکٹری میں موجود دس کیمیکل ٹینک میں چار کیمیکل ٹینکس کو آگ لگ گئی جبکہ باقی چھ کیمیکل ٹینکس محفوظ رہے ماہرین کے مطابق ایک ٹینک میں 40ہزار لیٹر کیمیکل موجود ہوتا ہے جو پینٹنگ اور پرنٹنگ کی انڈسٹری میں استعمال کیا جاتا ہے آتشزدگی کے واقعہ کے حوالے سے عینی شواہد کا کہنا ہے کہ جس کیمیکل فیکٹری میں آگ لگی ہے وہ فیکٹری غیر قانونی ہے کیونکہ سندر انڈسٹرئیل سٹیٹ کا مجوزہ بلاک فارماسیوٹیکل سے متعلقہ ہے مگر متاثرہ فیکٹری کو پلاٹ آلاٹ کر کے حکام نے بلڈنگ بائی لازکی خلاف ورزی کی ہے آگ کے باعث متاثرہ فیکٹری کے ساتھ والی فیکٹری کو بھی نقصان پہنچا اور دھماکوں سے فیکٹری کے شیشے اور کھڑکیاں سمیت دروازے ٹوٹ گئے تاہم ابھی تک آگ لگنے کی وجوہا ت سامنے نہیں آ سکیں ۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں