کراچی، اسلام آباد،لاہور ( آن لائن، این این آئی )انسانی حقوق کی آواز بننے والے پاکستان کے معروف صحافی آئی اے رحمان انتقال کر گئے۔انسانی حقوق کے علمبردار، آئی اے رحمٰن کے اہلخانہ کے مطابق آئی اے رحمٰن شوگر اور بلڈ پریشر کے مرض میں مبتلا تھے۔ آئی اے رحمٰن 1930میں ہریانہ میں پیدا ہوئے تھے جبکہ اْن کی عمر 90 برس تھی۔آئی اے رحمٰن نے انسانی حقوق کمیشن پاکستان کے ذریعے عوامی حقوق کی جدوجہد سمیت آزادی اظہار، انصاف کی فراہمی اور آئین کے تحفظ کے لیے بھی قلم سے جدوجہد کی۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے انسانی حقوق کے علمبردار اور صحافی آئی اے رحمن کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ سچائی اور انصاف کے علمبردار آئی اے رحمن کی وفات معاشرے کو یتیم کرگئی ہے ،مظلوم، بے کس اور بے بس طبقات کے لئے ایک طاقتور آواز آج خاموش ہوگئی

۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ آئی اے رحمن نے صحافت سے انسانی حقوق کمیشن تک ہرآن انسانوں کے حقوق کی جنگ لڑی ۔ انہوں نے کہاکہ وہ ایک لیجنڈ تھے جس نے ہرآمریت، ظالم اور فسطائی طاقتوں کو دلیرانہ انداز میں للکارا اور مقابلہ کیا ،وہ ان قائدین پر مشتمل ہراول دستے کے شاہسوار تھے جس نے آئین، قانون، جمہوریت اور انسانوں کے حقوق پرکبھی سمجھوتہ نہیں کیا ۔ انہوں نے کہاکہ آمریت، ظلم اور جبر کی تاریکرات میں وہ ہمیشہ ایک دیا بن کررہنمائی کا ذریعہ بنے ۔ انہوں نے کہاکہ ان کی وفات انسانی حقوق کی جنگ لڑنے والے کارکنان ،مظلوم انسانوں اورملک وقوم کا بڑا نقصان ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اللہ تعالی مرحوم کو جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا فرمائے اور لواحقین، پسماندگان اورسوگواران کو صبر جمیل دے۔ آمین۔علاوہ ازیں پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئر مین سابق صدر آصف زرداری نے آئی اے رحمان کے انتقال پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئی اے رحمان انسانی حقوق کے علمبردار تھے ۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں