اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلامی دنیا کے سب سے بڑے ایٹمی بجلی گھر کا افتتاح 21مئی کو ہوگا۔افتتاحی تقریب میں پاکستان اورچین کی اہم شخصیات شرکت کرینگی۔روزنامہ جنگ میں حنیف خالدکی شائع خبر کے مطابق پاکستان کے اس سب سے بڑے ایٹمی بجلی گھر کے ٹو سے گیارہ سو میگا واٹ یومیہ بجلی پیدا ہوگی۔اس تقریب کے لئے پاکستان ایٹمی توانائی کمیشن کےچیئرمین محمد نعیم اور سٹریٹیجک پلانز ڈویژن تیاریوں میں مصروف ہے ۔افتتاح کے لئے وزیر اعظم پاکستان کو باضابطہ تحریری استدعا کردی گئی ہے ۔جبکہ آزمودہ دوست چین کی اعلیٰ قیادت کو پاکستانی سفیر متعینہ بیجنگ اور چینی سفیر متعینہ اسلام آبادکے ذریعے چیئرمین ایٹمی توانائی کمیشن نے باضابطہ دعوت دیدی ہے ، کے ٹو ایٹمی بجلی گھر کی ملکیت ایٹمی ریگولیٹری اتھارٹی ہوگی جبکہ اس کے آپریٹر پاکستان ایٹمی توانائی کمیشن ہیں ،ان میں کئی ہفتوں سے پاکستان کے سب سے بڑے ایٹمی بجلی گھر کے سیف گارڈز سکیورٹی اور ٹیسٹ اینڈ ٹرائل رن شروع کرادئیے ہیں۔48میگا واٹ سے لے کر گیارہ سو میگا واٹ یومیہ تک بجلی پیدا کرنے کے حساس سسٹم کی آزمائش کا سلسلہ مارچ اپریل کے علاوہ مئی تک جاری رکھا جائے گا۔

21مئی 2021کو کے تھری(کراچی نیوکلیئر پاور پلانٹ کمپلیکس)کی افتتاحی تقریب میں عوامی جمہوریہ چین کے وفد میں چینی قیادت کے شامل ہونے کا امکان ہے ۔یہ ایٹمی بجلی گھر بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی اور امریکا کے ڈیپارٹمنٹ آف انرجی کی سپورٹسے بنارہا ہے ۔پاکستان آئی اے ای اے کا تو باضابطہ ممبر ہے لیکن ذرائع کے مطابق نیوکلیئر نان پرولی فریشن ٹریٹی پر اس کے دستخط اس وقت تک نہ کرنیکا اعلان کیا تھا جب تک انڈیا ایسا نہیں کرتا۔پیراڈائز کراچی کے کراچی نیوکلیئر پاور پلانٹ کمپلیکس کی آئی اے ای اے ریگولر مانیٹرنگ کررہا ہے ۔سے بنارہا ہے ۔پاکستان آئی اے ای اے کا تو باضابطہ ممبر ہے لیکن ذرائع کے مطابق نیوکلیئر نان پرولی فریشن ٹریٹی پر اس کے دستخط اس وقت تک نہ کرنیکا اعلان کیا تھا جب تک انڈیا ایسا نہیں کرتا۔پیراڈائز کراچی کے کراچی نیوکلیئر پاور پلانٹ کمپلیکس کی آئی اے ای اے ریگولر مانیٹرنگ کررہا ہے ۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں