شمالی وزیرستان سے پولیو کیس کی تصدیق ہوئی‘ شہباز شریف نے متعلقہ حکام سے پولیو کیس کی وجوہات سے متعلق رپورٹ طلب کرلیملک میں 15 ماہ بعد پہلا پولیو کیس رپورٹ ہوا ہے جس پر وزیراعظم شہباز شریف نے قومی ٹاسک فورس برائے انسداد پولیو کا اجلاس پیر کو طلب کر لیا ۔ تفصیلات کے مطابق قومی ادارہ صحت میں واقع پاکستان نیشنل پولیو لیبارٹری نے شمالی وزیرستان سے پولیو کیس کی تصدیق کی ہے

جس پر وزیراعظم شہباز شریف کی جانب سے ملک میں 15 ماہ بعد پہلا پولیو کیس رپورٹ ہونے پر تشویش کا اظہار کیا گیا ، جس پر شہباز شریف نے متعلقہ حکام سے پولیو کیس کی وجوہات سے متعلق رپورٹ طلب کر لی ہے اور پولیو خاتمے کے لیے لائحہ عمل بنانے کی بھی ہدایت کردی۔


بتایا گیا ہے کہ پاکستان میں 15 مہینے بعد پولیو کا پہلا کیس رپورٹ ہوا ہے ، 22 اپریل 2022 کو قومی ادارہ صحت میں واقع پاکستان نیشنل پولیو لیبارٹری نے شمالی وزیرستان سے پولیو کیس کی تصدیق کی جو سال 2022 میں دنیا بھر سے رپورٹ ہونے والا تیسرا کیس ہے جب کہ پاکستان پولیو لیبارٹری نے بنوں سے 5 اپریل کو ماحولیاتی نمونوں میں بھی وائرس کی تصدیق کی ہے۔سیکرٹری صحت عامر اشرف نے کہا ہے کہ کیس خیبر پختونخوا سے رپورٹ ہوا ہے جہاں سے ماحولیاتی

نمونوں سے وائرس کی نشاندھی کی گئی تھی ، یہاں پر پہلے سے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کئے گئے ہیں تاہم کیس رپورٹ ہونا بچوں کے لئے باعث تشویش ہے اور بلا شبہ پاکستان اور دنیا بھر میں پولیو کے خاتمہ کی کوششوں کے لئے بڑا دھچکہ ہے ، ہمیں کیس رپورٹ ہونے پر مایوسی ہوئی ہے تاہم ہم پرعزم ہیں۔
سیکرٹری صحت نے کہا کہ قومی اور صوبائی قومی ایمرجنسی آپریشنز سنٹر کیس کی مکمل جانچ پڑتال کے لئے ٹیموں کو ڈیوٹی پر لگایا جاچکا ہے اور وائرس کے مزید پھیلا کے روک تھام کیلئے ہنگامی بنیادوں پر مہمات چلائی جارہی ہیں تاکہ وائرس کے مزید پھیلا کی روک تھام کی جاسکے انہوں نے مزید کہا کہا سال 2021 کی آخری سہ ماہی میں جنوبی خیبرپختونخوا سے ماحولیاتی نمونوں سے وائرس رپورٹ ہونے کے بعد پروگرام نے پولیو وائرس کے لئے حساس قرار دیا تھا ، خیبرپختونخوا کے ڈی آئی خان اور بنوں ڈویزن سے ماحولیاتی نمونوں میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں