آزاد کشمیر میں عوامی ایکشن کمیٹی کی مطالبات قبول، بجلی اور آٹے کی نئی قیمتیں مقرر، انٹرنیٹ بحال۔

مظفرآباد: حکومت اور آزاد کشمیر عوامی ایکشن کمیٹی میں مطالبات کی منظوری کے حوالے سے معاہدہ طے پا گیا۔

 

آزاد کشمیر کے چیف سیکرٹری کے مطابق آل جموں و کشمیر پبلک ایکشن کمیٹی کے تمام مطالبات تسلیم کر لیے گئے ہیں، مطالبات کی منظوری کے حوالے سے ڈیل طے پا گئی ہے۔

 

چیف سیکرٹری نے بتایا کہ آزاد جموں و کشمیر میں انٹرنیٹ سروس بحال کر دی گئی ہے۔

 

دوسری جانب حکومت آزاد کشمیر نے بھی آٹے کی قیمتوں میں کمی اور بجلی کے نئے نرخوں کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔

 

نوٹیفکیشن کے مطابق فی کلو آٹے کی قیمت 2 ہزار روپے مقرر کی گئی ہے اور 20 کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت ایک ہزار روپے مقرر کی گئی ہے۔

 

مزید برآں 100 یونٹ تک بجلی کی قیمت 3 روپے فی یونٹ، 100 سے 300 یونٹس کے لیے 5 روپے فی یونٹ اور 300 سے زائد یونٹ کے لیے 6 روپے فی یونٹ مقرر کی گئی ہے۔

 

نوٹیفکیشن کے مطابق 300 یونٹس تک کے کمرشل نرخ 10 روپے فی یونٹ اور 300 سے زائد یونٹس کے لیے 15 روپے فی یونٹ مقرر کیے گئے ہیں۔

 

واضح رہے کہ بجلی کے بلوں اور مہنگائی کے خلاف عوامی ایکشن کمیٹی کی اپیل پر آزاد کشمیر میں احتجاجی مظاہرے ہوئے اور مختلف شہروں سے قافلوں نے لانگ مارچ کیا۔

 

آزاد کشمیر میں مظاہروں اور جھڑپوں کے دوران متعدد مظاہرین زخمی ہوئے، ایک پولیس اے ایس آئی بھی جان کی بازی ہار گیا۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں