لاہور ہائی کورٹ نے حکومتی معاملات میں مداخلت کے کیس میں عمران خان کی ضمانت منظور کرلی۔

 

 

لاہور ہائی کورٹ نے زمان پارک کے باہر حکومتی معاملات میں مداخلت کے کیس میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان کی عبوری ضمانت کی توثیق کردی۔

 

 جسٹس امجد رفیق نے 5 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے پر ضمانت کی توثیق کردی، عدالت میں پی ٹی آئی کے بانی بیرسٹر سلمان صفدر نے پیش کیا۔ اس موقع پر جسٹس امجد رفیق نے ریمارکس دیئے کہ پی ٹی آئی کے بانی اس وقت جیل میں سزا یافتہ قیدی ہیں، ان کی موجودگی کے بغیر سزا یافتہ قیدی کو ضمانت دی جا سکتی ہے۔

 

 واضح رہے کہ ضمانت یا ضمانت کی تصدیق کا مطلب ہے کہ اب اس کیس میں ضمانت مستقل بنیادوں پر دی گئی ہے، اور اس کیس میں فرد کو مزید گرفتار نہیں کیا جا سکتا۔ تاہم استغاثہ اس فیصلے کو چیلنج کر سکتا ہے، جس کے بعد عدالت چاہے تو ضمانت منسوخ کر سکتی ہے۔

 

 یہ امر قابل ذکر ہے کہ عمران خان نے جولائی 2023 میں براہ راست ہائی کورٹ سے عبوری ضمانت حاصل کی تھی۔ عمران خان کے خلاف وارنٹ گرفتاری پر عملدرآمد میں رکاوٹ ڈالنے اور پولیس پارٹی کے خلاف ریس کورس تھانے میں مقدمہ درج ہے۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں