قومی اسمبلی میں دوہری شہریت کے حامل افراد کی بطور جج تقرری پر پابندی کے لیے آئینی ترمیمی بل پیش

 

قومی اسمبلی میں دوہری شہریت کے حامل افراد کی بطور جج تقرری پر پابندی کے لیے آئینی ترمیمی بل پیش کر دیا گیا ہے۔ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے رکن نور عالم خان نے یہ پرائیویٹ بل قومی اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کرایا۔

 

مجوزہ قانون میں آئین کے آرٹیکل 177، 193 اور 208 میں ترمیم کرنے کی کوشش کی گئی ہے، جس کے تحت دوہری شہریت رکھنے والے کسی بھی شخص کو سپریم کورٹ یا ہائی کورٹ کا جج مقرر کرنے سے روک دیا جائے گا۔ بل میں اس پابندی کو عدالتوں کے افسران اور ملازمین تک بھی شامل کیا گیا ہے۔

 

اس بل کے پیچھے دلیل یہ ہے کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ جج ریاست کے ساتھ وفادار رہیں، کیونکہ دوہری شہریت رکھنے سے ان کی وفاداری پر سمجھوتہ ہو سکتا ہے اور مفادات کا تصادم ہو سکتا ہے

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں