شاہین شاہ آفریدی نے پاکستان کرکٹ ٹیم کی نائب کپتانی سے انکار

 

شاہین شاہ آفریدی نے پاکستان کرکٹ ٹیم کی نائب کپتانی سے انکار کرتے ہوئے کرکٹ کے حلقوں میں مختلف سوالات کو جنم دیا، خاص طور پر ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے قریب آتے ہی۔ ٹیم ذرائع کے مطابق شاہین فی الحال یہ ذمہ داری سنبھالنے کے لیے تیار نہیں ہیں جس کی وجہ سے محمد رضوان اس عہدے کے لیے مضبوط امیدوار ہیں۔

 

سینئر سپورٹس جرنلسٹ عبدالمجید بھٹی نے کہا کہ شاہین آفریدی حالیہ کپتانی کے معاملے سے بہت متاثر ہیں۔ صرف پانچ میچوں کے بعد کپتانی سے فارغ ہونے کے بعد، شاہین نے قائدانہ کردار ادا کرنے کے بجائے ٹیم اتحاد کو برقرار رکھنے کے لیے اپنی کرکٹ پر توجہ مرکوز کرنے کا فیصلہ کیا۔ شاہین آفریدی کے سسر شاہد آفریدی نے بھی انہیں اپنی کارکردگی پر توجہ مرکوز کرنے کا مشورہ دیا، انہیں یقین دلایا کہ مستقبل میں کپتانی کے مواقع قدرتی طور پر مستقل عمدہ کارکردگی کے ساتھ پیدا ہوں گے۔

 

سینئر سپورٹس جرنلسٹ عبدالمجید بھٹی نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ نیوزی لینڈ اور آئرلینڈ کے خلاف پاکستان کی حالیہ فتوحات میں شاہین آفریدی کا کردار اہم تھا، جہاں انہیں نیوزی لینڈ کے خلاف آخری دو میچوں میں مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ ٹیم کی حرکیات کے بارے میں، بھٹی نے نوٹ کیا کہ قومی ٹیم میں اس وقت نمایاں اتحاد ہے۔ شاہین کا کپتانی سے دستبردار ہونے کا فیصلہ میڈیا تنازعات سے بچنے اور میدان میں اپنی کارکردگی پر توجہ دے کر اس اتحاد کو برقرار رکھنے کی ان کی خواہش کو ظاہر کرتا ہے۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں